dard ke maaron pe hansta hai zamana be khabar by saghar siddiqui ‎درد کے ماروں پہ ہنستا ہے زمانہ بے خبر از ساغر صدیقی

درد کے ماروں پہ ہنستا ہے زمانہ بے خبر
زخم ہستی کی کسک سے ہے نشانہ بے خبر

نگہتوں کے سائے میں ٹوٹے پڑے ہیں چند پھول
بجلیوں کی یورشوں سے آشیانہ بے خبر

حسن_برہم کو نہیں حال_پریشاں سے غرض
ساز_دل کی دھڑکنوں سے ہے زمانہ بے خبر

دونوں عالم وسعت_آغوش کی تفسیر ہیں
دیکھنے میں ہے نگاہ_مجرمانہ بے خبر

آپ اپنے فن سے ناواقف ہے ساغر کی نظر
لعل و گوہر کی ضیاؤں سے خزانہ بے خبر

ساغر صدیقی

Advertisements

Published by

Raheem Baloch

www.facebook.com/rjrah33m

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s